سلام ہو میدان کربلاء میں بکھرے ابدان شہداء پر

موسوعہ حسینی

2016-11-10

2358 مشاہدہ

جسد اطہر حضرت امام حسین علیہ السلام سے جب اسیران کربلاء کا گزر ہوا تو کیا دیکھا کہ آپکا جسد اطہر خون میں ملطخ تھا تب سیدہ زینب سلام اللہ علیہا   نے گریہ گرتے ہوئے فرمایا (وا غربتاہ! وامصیبتاہ! ۔۔۔۔یہ لاشہ حسین  علیہ السلام ہے کہ جن کے سر اقدس کو تن سے جدا کردیا گیا اور عمامہ و عباء کو لوٹ لیا گیا۔اے بابا!ہمارے خیام کو لوٹ لیا گیا ۔

اے بابا! فسطاط  (وہ مقام جہاں لاشہ شہداء کو حضرت امام حسین علیہ السلام  ساتھ رکھتے تھے) سے   لاشہ شہداء کا پامال کردیاگیا )

پس سلام ہو اس خون  مظلوم پر جو زمین کربلاء پر جاری ہوا اور سلام ہو ان اعضاء پر جو  میدان کربلاء میں بکھرے ہوئے تھے اور سلام ہو نیزوں پر بلند سروں پر۔

نئے مواضیع

اکثر شائع

شایدآپ کو بھی پسند آئے